Aik Khat Ke Jawan Mein- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | ايک خط کےجواب ميں

ايک خط کےجواب ميں

Aik Khat Ke Jawan Mein

 

 

ہوس بھی ہو تو نہيں مجھ ميں ہمت تگ و تاز
حصول جاہ ہے وابستہ مذاق تلاش

Hawas Bhi Ho To Nahin Mujh Mein Himmat-e-Tag-o-Taaz
Husool-e-Jah Hai Wabasta-e-Mazaq-e-Talash

 

ہزار شکر، طبيعت ہے ريزہ کار مری
ہزار شکر، نہيں ہے دماغ فتنہ تراش

Hazar Shukar, Tabiat Hai Raiza Kaar Meri
Hazar Shukar, Nahin Hai Damagh-e-Fitna-e-Tarash

 

مرے سخن سے دلوں کی ہيں کھيتياں سرسبز
جہاں ميں ہوں ميں مثال سحاب دريا پاش

Mere Sukhan Se Dilon Hain Khaitian Sar Sabz
Jahan Mein Hun Main Missal-e-Sihaab Darya Pash

 

يہ عقدہ ہائے سياست تجھے مبارک ہوں
کہ فيض عشق سے ناخن مرا ہے سينہ خراش

Ye Uqdah Haye Siasat Tujhe Mubarik Hon
Ke Faiz-e-Ishq Se Nakhan Mera Hai Seena Kharash

 

ہوائے بزم سلاطيں دليل مردہ دلی
کيا ہے حافظ رنگيں نوا نے راز يہ فاش

Hawaye Bazm-e-Salateen Daleel-e-Murda Dili
Kiya Hai Hafiz-e-Rangeen Nawa Ne Raaz Ye Fash

 

گرت ہوا ست کہ با خضر ہم نشيں باشی
نہاں ز چشم سکندر چو آب حيواں باش

Garat Hawast Ke Ba-Khizr  Hum Nasheen Bashi
Nihan Za Chashm-e-Sikandar Cho Aab-e-Heewan Bash

 

 

 

 

Urfi- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | عرفی

One thought on “Aik Khat Ke Jawan Mein- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | ايک خط کےجواب ميں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *