Dil Baidar Farooqi, Dil Baidar Karari - Allama Iqbal Poetry

Dil Baidar Farooqi, Dil Baidar Karari – Allama Iqbal Poetry

Dil Baidar Farooqi, Dil Baidar Karari

Allama Iqbal Poetry – | – Bal-e-Jibril

Dil Baidar Farooqi, Dil Baidar Karari
Mis-E-Adam Ke Haq Mein Keemiya Hai Dil Ki Baidari

دل بيدار فاروقی ، دل بيدار کراری
مس آدم کے حق ميں کيميا ہے دل کی بيداری

Dil-E-Baidar Paida Kar K Dil Khawabida Hai Jab Tak
Na Teri Zarb Hai Kari, Na Meri Zarb Hai Kari

دل بيدار پيدا کر کہ دل خوابيدہ ہے جب تک
نہ تيری ضرب ہے کاری ، نہ ميری ضرب ہے کاری

Mashaam-E-Taiz Se Milta Hai Sehra Mein Nishan Iss Ka
Zan-O-Takhmeen Se Haath Ata Nahin Ahoo’ay Tatari

مشام تيز سے ملتا ہے صحرا ميں نشاں اس کا
ظن و تخميں سے ہاتھ آتا نہيں آہوئے تاتاری

Iss Andeshe Se Zabt-E-Aah Main Karta Rahon Kab Tak
K Munaa Zade Na Le Jaen Teri Qismat Ki Changari

اس انديشے سے ضبط آہ ميں کرتا رہوں کب تک
کہ مغ زادے نہ لے جائيں تری قسمت کی چنگاری

Khudawanda Ye Tere Sada Dil Bande Kidhar Jaen
Ke Darvaishi Bhi Ayyari Hai, Sultani Bhi Ayyari

خداوندا يہ تيرے سادہ دل بندے کدھر جائيں
کہ درويشی بھی عياری ہے ، سلطانی بھی عياری

Mujhe Tehzeeb-E-Hazir Ne Ata Ki Hai Vi Azadi
K Zahir Mein To Azadi Hai, Batin Mein Giraftari

مجھے تہذيب حاضر نے عطا کی ہے وہ آزادی
کہ ظاہر ميں تو آزادی ہے ، باطن ميں گرفتاری

Tu Ae MOLA’AY  YASRAB (S.A.W.) ! Ap Meri Chara-Sazi Kar
Meri Danish Hai Afrangi, Mera Iman Hai Zunnari

تو اے مولائے يثرب! آپ ميری چارہ سازی کر
مری دانش ہے افرنگی ، مرا ايماں ہے زناری

One thought on “Dil Baidar Farooqi, Dil Baidar Karari – Allama Iqbal Poetry

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *