Khula Hai Sabhi Kay Liye Baab E Rehmat [Naat Lyrics in Urdu]

Khula Hai Sabhi Kay Liye Baab E Rehmat [Naat Lyrics in Urdu]

Khula Hai Sabhi Kay Liye Baab E Rehmat

Khula Hai Sabhi Kay Liye Baab E Rehmat,
Wahan Koi Rutbay Main Adna Naa Aali
Muraadon Se Daamann Nahee Koi Khaali,
Qatarain Lagaye Kharay Hain Sawali,

کھلا ہے سبھی کے لیے بابِ رحمت، وہاں کوئی رتبے میں ادنیٰ نہ عالی
مرادوں سے دامن نہیں کوئی خالی، قطاریں لگائے کھڑے ہیں سوالی

Mein Pehlay Pehal Jab Madinaa Gya Tha,
To Thi Dill Ki Halat Tadapp Janay Wali,
Wo Darbaar Sach Much Mere Samnay Tha,
Abhi Tak Tasawwur Tha Jiss Ka Khiali,

میں پہلے پہل جب مدینے گیا تھا، تو تھی دل کی حالت تڑپ جانے والی
وہ دربار سچ مچ مرے سامنے تھا، ابھی تک تصور تھا جس کا خیالی

Main Ek Haath Say Dill Sanbhalay Huay Tha,
To Thi Doosray Haath Rozay Ki Jaali,
Dua Kay Liye Hath Uthte To Kesay!!!
Na Yeh Hath Khaali, Naa Woh Haath Khaali,

میں اک ہاتھ سے دل سنبھالے ہوئے تھا، تو تھی دوسرے ہاتھ میں سبز جالی
دعا کے لیے ہاتھ اٹھتے تو کیسے ، نہ یہ ہاتھ خالی نہ یہ ہاتھ خالی

Jo Poocha Hai Tum Nay, Kay Main Nazr Karnay
Ko Kia Lay Gya Tha, Tou Tafseel Sun Lo,
Tha Naaton Ka Ik Haar, Ashkon Kay Moti,
Daroodon Ka Gajra, Salamon Ki Daali,

جو پوچھا ہے تم نے ، کہ میں نذر کرنے کو، کیا لے گیا تھا، تو تفصیل سن لو
نعتوں کا اک ہار، اشکوں کے موتی، درودوں کا گجرا، سلاموں کی ڈالی

Dhani Apni Qismat Ka Hai To Wohi Hai,
Deyar E Nabi (S.A.W.W) Jiss Nay Aankhon Se Dekha,
Muqaddar Hai Sacha Muqaddar Ussi Ka,
Nigaah E Karam Jiss Pe Aaqa(S.Aw.W) Nay Daali,

دھنی اپنی قسمت کا ہے تو وہی ہے ، دیارِ نبیؐ جس نے آنکھوں سے دیکھا
مقدر ہے سچا مقدر اُسی کا، نگاہِ کرم جس پہ آقاؐ نے ڈالی

Main Uss Aastaan E Haram Ka Gada Hoon,
Jahan Sir Jhukatay Hain Shaahaan E Aalam,
Mujhay Taajdaaron Se Kamm Mat Samajhna,
Mera Sir Hai Shayaan E Taaj E Bilaali,

میں آستانِ حرم کا گدا ہوں، جہاں سجدے کرتے ہیں شایانِ عالم
مجھے تاجداروں سے کم مت سمجھنا، مِرا سر ہے شایانِ تاجِ بلالی

Khula Hai Sabhi Kay Liye Baab E Rehmat,
 Wahan Koi Rutbay Main Adna Naa Aali
Muraadon Se Daamann Nahee Koi Khaali,
Qatarain Lagaye Kharay Hain Sawali,

کھلا ہے سبھی کے لیے بابِ رحمت، وہاں کوئی رتبے میں ادنیٰ نہ عالی
مرادوں سے دامن نہیں کوئی خالی، قطاریں لگائے کھڑے ہیں سوالی

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *