Naveed-e-Subah- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | نويد صبح

Naveed-e-Subah- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | نويد صبح

نويد صبح

Naveed-e-Subah

 

 

آتی ہے مشرق سے جب ہنگامہ در دامن سحر
منزل ہستی سے کر جاتی ہے خاموشی سفر

Ati Hai Mashriq Se Jab Hangama Dar Daman Sehar
Manzil-e-Hasti Se Kar Jati Hai Khamoshi Safar

 

محفل قدرت کا آخر ٹوٹ جاتا ہے سکوت
ديتی ہے ہر چيز اپنی زندگانی کا ثبوت

Mehfil-e-Qudrat Ka Akhir Toot Jata Hai Sukoot
Deti Hai Har Cheez Apni Zindagaani Ka Saboot

 

چہچاتے ہيں پرندے پا کے پيغام حيات
باندھتے ہيں پھول بھی گلشن ميں احرام حيات

Chehchate Hain Prinde Pa Ke Pegham-e-Hayat
Bandhte Hain Phool Bhi Gulshan Mein Ahram-e-Hayat

 

مسلم خوابيدہ اٹھ ، ہنگامہ آرا تو بھی ہو
وہ چمک اٹھا افق ، گرم تقاضا تو بھی ہو

Muslim-e-Khawabidah Uth, Hangama Aara Tu Bhi Ho
Woh Chamak Utha Ufaq, Garam-e-Taqaza Tu Bhi Ho

 

وسعت عالم ميں رہ پيما ہو مثل آفتاب
دامن گردوں سے ناپيدا ہوں يہ داغ سحاب

Wusaat-e-Alam Mein Reh Pema Ho Misl-e-Aftab
Daman-e-Gardoon Se Na-Paida Hon Ye Dagh-e-Sahaab

 

کھينچ کر خنجر کرن کا ، پھر ہو سرگرم ستيز
پھر سکھا تاريکی باطل کو آداب گريز

Khainch Kar Khanjar Kiran Ka, Phir Ho Sargarma-e-Sataiz
Phir Sikha Tareeki-e-Batil Ko Adaab-e-Guraiz

 

تو سراپا نور ہے، خوشتر ہے عريانی تجھے
اور عرياں ہو کے لازم ہے خود افشانی تجھے

Tu Sarapa Noor Hai, Khoshtar Hai Uryani Tujhe
Aur Uryan Ho Ke Lazim Hai Khud Afshani Tujhe

 

ہاں ، نماياں ہو کے برق ديدئہ خفاش ہو
اے دل کون ومکاں کے راز مضمر فاش ہو

Haan, Numayan Ho Ke Barq-e-Didah-e-Khafash Ho
Ae Dil-e-Kon-o-Makan Ke Raaz-e-Muzmir Faash Ho

 

 

 

Shayar- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | شاعر

Qurb-e-Sultan- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | قرب سلطان

Taleem Aur Uss Ke Nataeej- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | تعليم اوراس کے نتائج

3 thoughts on “Naveed-e-Subah- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | نويد صبح

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *