Parinde Ki Faryad- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | پرندے کی فرياد

Parinde Ki Faryad- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | پرندے کی فرياد

پرندے کی فرياد

Parinde Ki Faryad

 

آتا ہے ياد مجھ کو گزرا ہوا زمانا
وہ باغ کی بہاريں وہ سب کا چہچہانا

Ata Hai Yaad Mujh Ko Guzra Huwa Zamana
Woh Bagh Ki Baharain, Woh Sub Ka Chehchana

 

آزادياں کہاں وہ اب اپنے گھونسلے کی
اپنی خوشی سے آنا اپنی خوشی سے جانا

Azadiyan Kahan Woh Ab Apne Ghonsle Ki
Apni Khushi Se Ana, Apni Khushi Se Jana

 

لگتی ہے چوٹ دل پر ، آتا ہے ياد جس دم
شبنم کے آنسوئوں پر کليوں کا مسکرانا

Lagti Hai Chot Dil Per, Ata Hai Yad Jis Dam
Shabnaam Ke Ansuon Per Kaliyon Ka Muskarana

 

وہ پياری پياری صورت ، وہ کامنی سی مورت
آباد جس کے دم سے تھا ميرا آشيانا

Vo Payari Payari Soorat, Vo Kamni Si Moorat
Abad Jis Ke Dam Se Tha Mera Ashiyana

 

آتی نہيں صدائيں اس کی مرے قفس ميں
ہوتی مری رہائی اے کاش ميرے بس ميں

Ati Nahin Sadaen Uss Ki Mere Qafas Mein
Hoti Meri Rehai Ae Kash Mere Bus Mein!

 

کيا بد نصيب ہوں ميں گھر کو ترس رہا ہوں
ساتھی تو ہيں وطن ميں ، ميں قيد ميں پڑا ہوں

Kya Badnaseeb Hun Mein Ghar Ko Taras Raha Hun
Sathi To Hain Watan Mein, Main Qaid Mein Para Hun

 

آئی بہار کلياں پھولوں کی ہنس رہی ہيں
ميں اس اندھيرے گھر ميں قسمت کو رو رہا ہوں

Ayi Bahar, Kaliyan Phoolon Ki Hans Rahi Hain
Mein Iss Andhere Ghar Mein Kismat Ko Ro Raha Hun

 

اس قيد کا الہی! دکھڑا کسے سنائوں
ڈر ہے يہيں قفسں ميں ميں غم سے مر نہ جاؤں

Iss Qaid Ka Elahi! Dukhra Kise Sunaun
Der Hai Yahin Qafas Mein Main Gham Se Mer Na Jaun

 

جب سے چمن چھٹا ہے ، يہ حال ہو گيا ہے
دل غم کو کھا رہا ہے ، غم دل کو کھا رہا ہے

Jab Se Chaman Chuta Hai, Ye Haal Ho Gya Hai
Dil Gham Ko Kha Raha Hai, Gham Dil Ko Kha Raha Hai

 

گانا اسے سمجھ کر خوش ہوں نہ سننے والے
دکھے ہوئے دلوں کی فرياد يہ صدا ہے

Gana Issay Samajh Ker Khush Hon Na Sunne Wale
Dukhe Huwe Dilon Ki Faryad Ye Sada Hai

 

آزاد مجھ کو کر دے ، او قيد کرنے والے
ميں بے زباں ہوں قيدی ، تو چھوڑ کر دعا لے

Azad Mujh Ko Ker De, O Qaid Kerne Wale
Main Bezuban Hun Qaidi, Tu Chor Ker Dua Le

 

Maan Ka Khawab- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | ماں کا خواب

Bache Ki Dua – Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | بچے کی دُعا

Aik Gaye Aur Bakri – Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | ايک گائے اور بکری

One thought on “Parinde Ki Faryad- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | پرندے کی فرياد

  1. Pingback: site.com

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *