Siddique (R.A.)- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | صديق رضی اللہ عنہ

صديق رضی اللہ عنہ

Siddique (R.A.)

 

 

اک دن رسول پاک نے اصحاب سے کہا
ديں مال راہ حق ميں جو ہوں تم ميں مالدار

Ek Din Rusool-e-Pak (S.A.W.) Ne Ashab (R.A.) Se Kaha
Dain Maal Rah-e-Haq Mein Jo Hon Tum Mein Maal-Dar

 

ارشاد سن کے فرط طرب سے عمر اٹھے
اس روز ان کے پاس تھے درہم کئی ہزار

Irshad Sun Ke Fart-e-Tarb Se Umer ( R.A.) Uthe
Uss Roz Un Ke Pas The Darham Kai Hazar

 

دل ميں يہ کہہ رہے تھے کہ صديق سے ضرور
بڑھ کر رکھے گا آج قدم ميرا راہوار

Dil Mein Ye Keh Rahe The Ke Siddique (R.A.) Se Zuroor
Barh Kar Rakhe Ga Aaj Qadam Mera Rahwar

 

لائے غرضکہ مال رسول اميں کے پاس
ايثار کی ہے دست نگر ابتدائے کار

Laye Ghazke Maal Rusool-e-Ameen (S.A.W.) Ke Paas
Aesar Ki Hai Dast Nigar Ibtadaye Kaar

 

پوچھا حضور سرور عالم نے ، اے عمر
اے وہ کہ جوش حق سے ترے دل کو ہے قرار

Pucha Huzoor Sarwar-e-Alam (S.A.W.) Ne, Ae Umer!
Ae Woh Ke Josh-e-Haq Se Tere Dil Ko Hai Qarar

 

رکھا ہے کچھ عيال کی خاطر بھی تو نے کيا؟
مسلم ہے اپنے خويش و اقارب کا حق گزار

Rakha Hai Kuch Ayaal Ki Khatir Bhi Tu Ne Kya?
Muslim Hai Apne Khowesh-o-Aqarab Ka Haq-Guzar

 

کی عرض نصف مال ہے فرزند و زن کا حق
باقی جو ہے وہ ملت بيضا پہ ہے نثار

Ki Arz Nisf Maal Hai Farzand-o-Zan Ka Haq
Baqi Jo Hai Woh Millat-e-Baiza Pe Hai Nisar

 

اتنے ميں وہ رفيق نبوت بھی آگيا
جس سے بنائے عشق و محبت ہے استوار

Itne Mein Woh Rafeeq-e-Nabuwwat Bhi Aa Gya
Jis Se Binaye Ishq-o-Mohabbat Hai Ustawar

 

لے آيا اپنے ساتھ وہ مرد وفا سرشت
ہر چيز ، جس سے چشم جہاں ميں ہو اعتبار

Le Aya Apne Sath Woh Mard-e-Wafa Sarisht
Har Cheez, Jis Se Chashm-e-Jahan Mein Ho Aetibar

 

ملک يمين و درہم و دينار و رخت و جنس
اسپ قمر سم و شتر و قاطر و حمار

Milk-e-Yameen-o-Dirham-o-Dinar-o-Rakht-o-Jinse
Isp-e-Qamarsam-o-Shutar-o-Qatir-o-Himaar

 

بولے حضور، چاہيے فکر عيال بھی
کہنے لگا وہ عشق و محبت کا راز دار

Bole Huzoor (S.A.W.), Chahiye Fikr-e-Ayaal Bhi
Kehne Laga Woh Ishq-o-Mohabbat Ka Raaz-Dar

 

اے تجھ سے ديدۂ مہ و انجم فروغ گير
اے تيری ذات باعث تکوين روزگار

Ae Tujh Se Didah-e-Mah-o-Anjum Farogh-Geer!
Ae Teri Zaat Baees-e-Takween-e-Rozgar

 

پروانے کو چراغ ہے، بلبل کو پھول بس
صديق کے ليے ہے خدا کا رسول بس

Parwane Ko Charagh Hai, Bulbul Ko Phool Bas
Siddique Ke Liye Hai Khuda Ka Rusool (S.A.W.) Bas

 

 

 

Irtiqa- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | ارتقا

Shibli-o-Haali- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | شبلی وحالی

Tazmeen Bar Shair-e-Abu Talib Kaleem- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | تضمين برشعر ابوطالب کليم

21 thoughts on “Siddique (R.A.)- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | صديق رضی اللہ عنہ

  1. Pingback: tornadoes
  2. Pingback: เติม psn
  3. Pingback: rich89bet
  4. Pingback: Kurdistan
  5. Pingback: Skrot Göteborg
  6. Pingback: ปลูกผม
  7. Pingback: Skrotbilar hämtas

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *