Mahasra-e-Adarna- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | محاصرۂ ادرنہ

محاصرۂ ادرنہ

Mahasra-e-Adarna

 

 

يورپ ميں جس گھڑی حق و باطل کی چھڑ گئی
حق خنجر آزمائی پہ مجبور ہو گيا

Europe Mein Jis Ghari Haq-o-Batil Ki Chir Gyi
Haq Khanjar Aazmai Pe Majboor Ho Gya

 

گرد صليب گرد قمر حلقہ زن ہوئی
شکری حصار درنہ ميں محصور ہو گيا

Gard-e-Saleeb, Gard-e-Qamar Halqa Zan Huwi
Shikri Hisar-e-Darna Mein Mehsoor Ho Gya

 

مسلم سپاہيوں کے ذخيرے ہوئے تمام
روئے اميد آنکھ سے مستور ہو گيا

Muslim Sipahiyon Ke Zakheere Huwe Tamam
Rooye Umeed Aankh Se Mastoor Ho Gya

 

آخر امير عسکر ترکی کے حکم سے
آئين جنگ شہر کا دستور ہوگيا

Akhir Ameer-e-Askar-e-Turkey Ke Hukm Se
‘Aaeen-e-Jang’ Sheher Ka Dastoor Ho Gya

 

ہر شے ہوئی ذخيرہ لشکر ميں منتقل
شاہيں گدائے دانۂ عصفور ہو گيا

Har Shay Huwi Zakheera-e-Lashkar Mein Muntaqil
Shaheen Gadaye Dana-e-Usfoor Ho Gya

 

ليکن فقيہ شہر نے جس دم سنی يہ بات
گرما کے مثل صاعقہ طور ہو گيا

Lekin Faqeeh-e-Sheher Ne Jis Dam Suni Ye Baat
Garma Ke Misl-e-Saeeqa-e-Toor Ho Gya

 

ذمی کا مال لشکر مسلم پہ ہے حرام
فتوی تمام شہر ميں مشہور ہو گيا

Zimmi Ka Maal Lashkar-e-Muslim Pe Hai Haraam
Fatwa Tamam Sheher Mein Mashoor Ho Gya

 

چھوتی نہ تھی يہود و نصاری کا مال فوج
مسلم ، خدا کے حکم سے مجبور ہوگيا

Chhuti Na Thi Yahood-o-Nasara Ka Maal Fouj
Muslim, Khuda Ke Hukm Se Majboor Ho Gya

 

 

 

Shabnam Aur Sitare- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | شبنم اورستارے

Fatima Bint Abdullah- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | فاطمہ بنت عبداللہ

Eid Par Shair Likhne Ki Farmaeesh Ke Jawab Mein- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | عيد پر شعرلکھنےکی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *