Raat Machar Ne Keh Diya Mujh Se – Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | رات مچھر نے کہہ ديا مجھ سے

رات مچھر نے کہہ ديا مجھ سے

Raat Machar Ne Keh Diya Mujh Se

 

 

رات مچھر نے کہہ ديا مجھ سے
ماجرا اپنی ناتمامی کا

Raat Machar Ne Keh Diya Mujh Se
Majra Apni Na-Tamami Ka


مجھ کو ديتے ہيں ايک بوند لہو
صلہ شب بھر کی تشنہ کامی کا

Mujh Ko Dete Hain Aik Boond Lahoo
Sila Shab Bhar Ki Tashna Kaami Ka


اور يہ بسوہ دار، بے زحمت
پی گيا سب لہو اسامی کا

Aur Ye Biswadar Be-Zehmat
Pe Gya Sub Lahoo Asami Ka

 

 

 

 

Gaye Ek Roz Huwi Unth Se Yun Garam-e-Sukhan – Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | گائےاک روز ہوئی اونٹ سے يوں گرم سخن

Dekhiye Chalti Hai Mashriq Ki Tijarat Kab Talak – Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | ديکھیے چلتی ہے مشرق کی تجارت کب تک

Farma Rahe Thay Sheikh Tareek-e-Amal Pe Wa’az – Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | فرما رہے تھے شيخ طريق عمل پہ وعظ

28 thoughts on “Raat Machar Ne Keh Diya Mujh Se – Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | رات مچھر نے کہہ ديا مجھ سے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *