Taleem Aur Uss Ke Nataeej- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | تعليم اوراس کے نتائج

Taleem Aur Uss Ke Nataeej- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | تعليم اوراس کے نتائج

تعليم اوراس کے نتائج

(تضمين بر شعر ملا عرشی)

Taleem Aur Uss Ke Nataeej
(Tazmeen Bar-Shair Mullah Arshi)

 

 

خوش تو ہيں ہم بھی جوانوں کی ترقی سے مگر
لب خنداں سے نکل جاتی ہے فرياد بھی ساتھ

Khush To Hain Hum Bhi Jawanon Ki Taraqqi Se Magar
Lab-e-Khandan Se Nikal Jati Hai Faryad Bhi Sath

 

ہم سمجھتے تھے کہ لائے گی فراغت تعليم
کيا خبر تھی کہ چلا آئے گا الحاد بھی ساتھ

Hum Samajhte The Ke Laye Gi Faraghat Taleem
Kya Khabar Thi Ke Chala Aye Ga Ilhad Bhi Sath

 

گھر ميں پرويز کے شيريں تو ہوئی جلوہ نما
لے کے آئی ہے مگر تيشۂ فرہاد بھی ساتھ

Ghar Mein Parvaiz Ke Shireen To Huwi Jalwa Numa
Le Ke Ayi Hai Taisha-e-Farhad Bhi Sath

 

تخم ديگر بکف آريم و بکاريم ز نو
کانچہ کشتيم ز خجلت نتواں کرد درو

Tukham-e-Degar Bakaf Aaryem-Wa-Bakariyem Za-Nau
Kancha Kashtiyem Za Khujlat Natawan Kard Drau

 

 

 

Saqi- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | ساقی

Jawab-e-Shikwa- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | جواب شکوہ

Shikwa- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | شکوہ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *