Aa Ke Meri Jaan Main Qaraar Nahi Hai - Mirza Ghalib Poetry

Aa Ke Meri Jaan Main Qaraar Nahi Hai – Mirza Ghalib Poetry

Aa Ke Meri Jaan Main Qaraar Nahi Hai

آ کہ مری جان کو قرار نہیں ہے

 

Aa Ke Meri Jaan Main Qaraar Nahi Hai
Taaqat-E-Bedaad-E-Intazaar Nahi Hai

آ کہ مری جان کو قرار نہیں ہے
طاقتِ بیدادِ انتظار نہیں ہے

 

Dete Hain Jannat Hayaat-E-Dahar Ke Badle
Nashsha Bandaza-E-Khumaar Nahin Hai

دیتے ہیں جنّت حیاتِ دہر کے بدلے
نشّہ بہ اندازۂ خمار نہیں ہے

 

Giriya Nikaale Hai Teri Bazm Se Mujh Ko
Haaye Ki Rone Pe Ikhtiyaar Nahi Hai

گِریہ نکالے ہے تیری بزم سے مجھ کو
ہائے کہ رونے پہ اختیار نہیں ہے

 

Ham Se Abas Hai Gumaan-E-Ranjish-E-Khaatir
Khaak Main Ushshaq Ki Gubaar Nahi Hai

ہم سے عبث ہے گمانِ رنجشِ خاطر
خاک میں عشّاق کی غبار نہیں ہے

 

Dil Se Uthaa Lutf-E-Jalwa Haaye Maani
Gair-E-Gul Aaina-E-Bahaar Nahi Hai

دل سے اٹھا لطفِ جلوہ‌ہاۓ معانی
غیرِ گل آئینۂ بہار نہیں ہے

 

Qatal Ka Mere Kiya Hai Ahad To Baare
Waye! Agar Ahad Ustavaar Nahi Hai

قتل کا میرے کیا ہے عہد تو بارے
وائے اگر عہد استوار نہیں ہے

 

Tu Ne Qasam Maikashi Ki Khaai Hai Ghalib
Teri Qasam Ka Kuch Aitabaar Nahi Hai

تو نے قسم مے کشی کی کھائی ہے غالب
تیری قسم کا کچھ اعتبار نہیں ہے

 

 

 

Diya Hai Dil Agar Us Ko Bashar Hai Kya Kahiye – Mirza Ghalib Poetry

Rone Se Aur Ishq Mein Bebaak Ho Gaye – Mirza Ghalib Poetry

5 thoughts on “Aa Ke Meri Jaan Main Qaraar Nahi Hai – Mirza Ghalib Poetry

  1. Pingback: this page

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *