Tazmeen Bar Shair-e-Aneesi Shamlu- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | تضمين بر شعر انيسی شاملو

Tazmeen Bar Shair-e-Aneesi Shamlu- Bang-e-Dara | Allama Iqbal Poetry | تضمين بر شعر انيسی شاملو

تضمين بر شعر انيسی شاملو

Tazmeen Bar Shair-e-Aneesi Shamlu

 

ہميشہ صورت باد سحر آوارہ رہتا ہوں
محبت ميں ہے منزل سے بھی خوشتر جادہ پيمائی

Hamesha Soorat-e-Bad-e-Sehar Awara Rehta Hun
Mohabbat Mein Hai Manzil Se Bhi Khaushtar Jadah Pemayi

 

دل بے تاب جا پہنچا ديار پير سنجر ميں
ميسر ہے جہاں درمان درد نا شکيبائی

Dil-e-Betab Ja Pohancha Diyar-e-Peer-e-Sanjar Mein
Muyassar Hai Jahan Darman-e-Dard-e-Nashakeebai

 

ابھی نا آشنائے لب تھا حرف آرزو ميرا
زباں ہونے کو تھی منت پذير تاب گويائی

Abhi Na-Ashnaye Lab Tha Harf-e-Arzoo Mera
Zuban Hone Ko Thi Minnat Pazeer-e-Taab-e-Goyai

 

يہ مرقد سے صدا آئی ، حرم کے رہنے والوں کو
شکايت تجھ سے ہے اے تارک آئين آبائی

Ye Marqad Se Sada Ayi, Haram Ke Rehne Walon Ko
Shikayat Tujh Se Hai Ae Tarik-e-Aaeen-e-Aabayi

 

ترا اے قيس کيونکر ہوگيا سوز دروں ٹھنڈا
کہ ليلی ميں تو ہيں اب تک وہی انداز ليلائی

Tera Ae Qais Kyunkar Ho Gya Souz-e-Daroon Thanda
Ke Laila Mein To Hain Ab Tak Wohi Andaz-e-Lailayi

 

نہ تخم لا الہ تيری زمين شور سے پھوٹا
زمانے بھر ميں رسوا ہے تری فطرت کی نازائی

Na Tukhm-e-‘La Ilaha’ Teri Zameen-e-Shor Se Phoota
Zamane Bhar Mein Ruswa Hai Teri Fitrat Ki Nazayi

 

تجھے معلوم ہے غافل کہ تيری زندگی کيا ہے
کنشتی ساز، معمور نوا ہائے کليسائی

Tujhe Maaloom Hai Ghafil Ke Teri Zindagi Kya Hai
Kunishti Saaz, Maamoor-e-Nawa Haye Kaleesai

 

ہوئی ہے تربيت آغوش بيت اللہ ميں تيری
دل شوريدہ ہے ليکن صنم خانے کا سودائی

Huwi Hai Tarbiat Aghosh-e-Bait Ullah Mein Teri
Dil Shourida Hai Lekin Sanam Khane Ka Soudai

 

وفا آموختی از ما، بکار ديگراں کر دی
ربودی گوہرے از ما نثار ديگراں کر دی

Wafa Aamo Khasti Azma Bakar-e-Deegaran Kardi
Rabudi Gohare Azma Nisar-e-Deegran Kardi

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *