Tujhe Yaad Kya Nahin Hai Mere Dil Ka Woh Zamana Allama Iqbal Poetry - Bal-e-Jibril

Tujhe Yaad Kya Nahin Hai Mere Dil Ka Woh Zamana

Tujhe Yaad Kya Nahin Hai Mere Dil Ka Woh Zamana

Allama Iqbal Poetry – Bal-e-Jibril

Tujhe Yaad Kya Nahin Hai Mere Dil Ka Woh Zamana
Woh Adab Gah-e-Mohabbat, Woh Nigah Ka Taziyana

تجھے ياد کيا نہيں ہے مرے دل کا وہ زمانہ
وہ ادب گہ محبت ، وہ نگہ کا تازيانہ

Ye Butan-e-Asar-e-Hazir Ke Bane Hain Madrasay Mein
Na Ada’ay Kafirana, Na Taraash-e-Azrana

يہ بتان عصر حاضر کہ بنے ہيں مدرسے ميں
نہ ادائے کافرانہ ، نہ تراش آزرانہ

Nahin Iss Khuli Faza Mein Koi Ghosh’ay Faraghat
Ye Jahan Ajab Jahan Hai, Qafas Na Ashiyana

نہيں اس کھلی فضا ميں کوئی گوشۂ فراغت
يہ جہاں عجب جہاں ہے ، نہ قفس نہ آشيانہ

Rag-e-Taak Muntazir Hai Teri Barish-e-Karam Ki
Ke Ajam Ke Mai Kadon Mein Na Rahi Mai’ay Maghana

رگ تاک منتظر ہے تری بارش کرم کی
کہ عجم کے مے کدوں ميں نہ رہی مے مغانہ

Mere Hum Safeer Isse Bhi Asar-e-Bahar Samjhe
Inhain Kya Khabar Ke Kya Hai Ye Nawa’ay Ashiqana

کہ عجم کے مے کدوں ميں نہ رہی مے مغانہ
مرے ہم صفير اسے بھی اثر بہار سمجھے

Mere Khaak-o-Khoon Se Tu Ne Ye Jahan Kiya Hai Paida
Sila-e-Shaheed Kya Hai, Tab-o-Taab-e-Javidana

انھيں کيا خبر کہ کيا ہے يہ نوائے عاشقانہ
مرے خاک و خوں سے تونے يہ جہاں کيا ہے پيدا

Teri Banda Parwari Se Mere Din Guzar Rahe Hain
Na Gila Hai Doston Ka, Na Shikayat-e-Zamana

تری بندہ پروری سے مرے دن گزر رہے ہيں
نہ گلہ ہے دوستوں کا ، نہ شکايت زمانہ

3 thoughts on “Tujhe Yaad Kya Nahin Hai Mere Dil Ka Woh Zamana

  1. Pingback: fuck girldice
  2. Pingback: ผ้า

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *